پیپلز پارٹی کی سلام شہداءریلی: #SalamShuhdaRally

cu3t5gqw8aa7s_8
پیپلز پارٹی کی جانب سے سانحہ کارساز کے شہدا کو خراج عقیدت پیش کر نے کے لئے سلام شہداء ریلی نکالی جا رہی ہے, بلاول بھٹو کی قیادت میں ریلی بلاول چورنگی سے نکالی جائے گی جو لیاری اور پھر ایم اے جناح روڈ سے ہوتی ہوئی شارع فیصل پر پہنچ کر اختتام پزیر ہوگی جہاں بلاول بھٹو اور پیپلز پارٹی کے دیگر مرکزی قائدین شرکاء سے خطاب کریں گے۔
ریلی میں شرکت کے لئے شرکاء کی بڑی تعداد بلاول ہاؤس چورنگی پہنچ چکی ہے اور کارکنوں نے خود کو پارٹی پرچم اور مختلف رنگوں میں رنگ لیا ہے جب کہ پیپلز پارٹی کے ترانوں پر رقص کیا جا رہا ہے۔ پیپلز پارٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ چیرمین بلاول بھٹو زرداری کارکنوں کا لہو گرمانے کے لئے 4 مقامات پر خطاب کریں گے۔ دوسری جانب پیپلز پارٹی کی ریلی کے پیش نظر مختلف سڑکوں کو کنٹینر لگا کر بند کر دیا گیا ہے، ایم اے جناح روڈ پر بند ہونے کے باعث سول اسپتال جانے والوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔
چیرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے سوشل میڈیا پر اپنے ٹویٹ میں کہا ہے کہ ہم نعرہ ماریں بھٹو، ہم پرچم تھامیں بھٹو کا۔

 

پیپلز پارٹی کی سلام شہداریلی کا آغازبلاول بھٹو زرداری کی قیادت میں آج صبح بلاول ہاﺅس چورنگی سے ہوگا۔جہاں بلاول بھٹوزرداری شرکاءسے پہلاخطاب کریں گے۔ پیپلز پارٹی کے چیئرمین خصوصی طورپرتیارکئے گئے بم پروف ٹرک میں سوارہوکر ریلی کی قیادت کریں گے۔ ان کی حفاظت ’جانثاران بے نظیر بھٹو‘کریں گے۔
ریلی بوٹ بیسن سے مولوی تمیزالدین خان اور جناح برج سے ہوتے ہوئے کھارادرجماعت خانہ اور پھرککری گراﺅنڈ اور لی مارکیٹ پہنچے گی۔ جہاں بلاول بھٹوزرداری لیاری کے لوگوں سے خطاب کریں گے جس کے بعد ریلی رنچھوڑلائن سے ہوتی ہوئی سعیدمنزل کے قریب ایم اے جناح روڈپر نکلے گی اور وہاںسے مزارقائدکے سامنے بھی بلاول بھٹوزرداری کاخطاب متوقع ہے۔
مزارقائدسے ریلی خدادادکالونی جائے گی جہاں سے براستہ شاہراہ قائدین اور شاہراہ فیصل سے کارسازپہنچے گی۔ یہاں بلال بھٹوزرداری جیالوں سے خطاب کریں گے۔
گزشتہ شب سانحہ کارساز میں شہید ہونے والوں کی یاد میں گذشتہ رات شمعیں روشن کی گئیں ۔ یادگار شہدا پر لگائے گئے کیمپ کا پیپلز پارٹی رہنماؤں اور چیئرمین بلاول بھٹو نے دورہ کیا ۔ کارکنوں نے ڈھول کی تھاپ پر رقص کیا ، بلاول بھٹو کارکنوں میں گھل مل گئے ۔ ان کا کہنا تھا پیپلز پارٹی کی آج تاریخی ریلی نکالی جائے گی ۔ اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کارکنوں سے خطاب میں کہا کہ اس ریلی کے بعد حکمرانوں کو معلوم ہوجائیگا کہ پیپلز پارٹی کے جیالے پاکستان کے کسی بھی کونے میں ہوں وہ زندہ ہیں ۔ مولا بخش چانڈیو کا کہنا تھا جو کہتے تھے پیپلز پارٹی ختم ہوگئی ان کو منہ کی کھانی پڑے گی ۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s