جلاوطن نہیں ہوں کچھ ہفتوں میں وطن واپس آجاؤں گا، آصف زرداری


سابق صدر آصف زرداری کا کہنا ہے کہ دبئی میں قیام سے متعلق میرے حوالے سے غلط افواہیں پھیلائی گئیں جب کہ میں جلاوطن نہیں ہوں کچھ ہفتوں میں واپس پاکستان آجاؤں گا۔
انہوں نے ’جیو نیوز‘ کے پروگرام ’کیپیٹل ٹاک‘کے میزبان حامد میر کو انٹرویو دیتے ہوئے مزید کہا کہ مشرف نے ووٹوں کے لیے بھیک مانگی، مگر ہم نے اسے مکھی کی طرح باہر نکال دیا۔
آصف زرداری کا کہنا تھا کہ لندن میں میرے پاس کوئی اپارٹمنٹ نہیں،سرے محل بھی اب نہیں ہے،ہمیں حکومت میں ناکردہ گناہ کی بھی سزا ملتی تھی۔
ان کا کہنا تھا کہ میں جلا وطن نہیں ہوں،سیاست میں ٹائمنگز ہوتی ہیں،چاہتا تھا بلاول آگے آئے اور ذمےداری اٹھائے،عنقریب کچھ ہفتوں میں پاکستان میں ہوں گا۔
آصف زرداری نے مزید کہا کہ ڈاکٹر عاصم خاندانی شریف ہیں، ان کا پڑھا لکھا خاندان ہے،وہ سافٹ ٹارگٹ تھے اس لیے نشانہ بن گئے، امید ہے ڈاکٹر عاصم عنقریب باہر آجائیں گے ۔
انہوں نے کہا کہ 6سال بعد دوبارہ گرفتار کیا تو مجھ پر بی ایم ڈبلیو کا کیس بنایا گیا،جیل میری دیکھی ہوئی ہے، یہ ہاتھ میرے آزمائے ہوئے ہیں،جو جیل سے گھبرا تے ہیں وہ سیاست کے بجائے کچھ اور کریں،مرتضیٰ بھٹو کے کیس میں بھی وعدہ معاف گواہ تھے، کیس میں باعزت بری ہوئے۔
آصف زرداری نے بتایا کہ چین بہت اچھا دوست ہے، چین سے اچھی قوم اور ملک نہیں ،حکومت کے دوران ہر ہفتے ایک چینی وفد مجھ سے ملاقات کیلئے آتا تھا، چینی وفد کو بتا تا تھا کہ گوادر وسط چین سے کتنادور ہے،ہم نے 35 ملین ڈالر میں گوادر پورٹ چین کو دیا۔
پی ٹی آئی چیئرمین کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ عمران خان ہر بال پر چھکا مارنا چاہتے ہیں ،وہ انوکھا لاڈلا ہیں، جو کھیلن کو مانگے ہے چاندنی،چاندنی کا مطلب وزارت عظمیٰ ہے۔
آصف زرداری نے مزید یہ بھی کہا کہ عمران خان پاناما کامعاملہ سپریم کورٹ میں لے کر گئے ہیں،بابر اعوان پروفیشنل وکیل ہیں جو فیس دے گا وہ اس کے وکیل بنیں گے جبکہ اعتزاز احسن اور عمران خان پرانے محلے دار ہیں ۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم یہ نہیں کہہ رہے کہ حنا ربانی کو وزیر خارجہ لگا لیں،اپنا کوئی بنا لیں، جمہوریت کا ارتقا سپریم کورٹ میں نہیں، پارلیمنٹ میں ہو گا، پارلیمنٹ میں آپ سوال پوچھ سکتے ہیں، اس سے جمہوریت مضبوط ہوتی ہے۔
آصف زرداری کہتے ہیں کہ سپریم کورٹ کے کمیشن کا کوئی نتیجہ نہ نکلا تو کیا فائدہ،حکومت کے خلاف احتجاج پر جو پارٹی کا حکم ہو گا وہ کریں گے،2013ء کا انتخاب آر او الیکشن تھا،اٹھارہویں ترمیم کے ذریعے صوبوں کو اسلام آباد کے ساتھ جوڑا، آرمی چیف کو توسیع دے کر خود کو اور پارلیمنٹ کو مضبوط کیا۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ نواز شریف جلسے عمران خان کے بغض میں کرتے ہیں،ڈونلڈ ٹرمپ کاروباری شخص ہیں، امریکیوں کو مضبوط کرنا چاہتے ہیں۔
سابق صدر کا کہنا تھا کہ کراچی میں کچرا اٹھانے کے لیے چین کی کمپنی سے معاہدہ ہو گیا، چین کی کمپنی سے کچرا اٹھانے کا نرخ کم ہے، جدید ٹیکنالوجی کے استعمال سے چین کو بھی پانی دیا جاسکتا ہے۔
آصف زرداری کہتے ہیں کہ کراچی کے لیے مرکزی حکومت کو سوچنا چاہیے،شہر قائد کےلیے مرکزی حکومت کو خصوصی فنڈ رکھنا ہوگا ،اندرون سندھ پل بنے ہیں، سڑکیں بنی ہیں،بن بھی رہی ہیں۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s