تخت رائیونڈ کی آمریت کا خاتمہ جمہوری جدوجہد کے زریعے کریں گے، بلاول بھٹو

ppp
میں نے لاہور کو انقلاب کے لیے چُنا ہے، ہم کہتے ہیں میاں صاحب چار مطالبات مان لیں 27 دسمبر زیادہ دور نہیں، بھٹو کی تازہ دم فوج تیار ہو رہی ہے: چیئرمین پیپلزپارٹی
لاہور شہر میں نئی پیپلز پارٹی جنم لے رہی ہے۔ لاہور کی پہچان جہانگیر بدر بھی ہیں اور میں یوم تاسیس مرحوم جہانگیر بدر کے نام کرتا ہوں۔
پورے ملک میں ڈسٹرکٹ آرگنائزیشن کا عمل جاری ہے۔ بلاول بھٹو نے کہا ہم ایک نیا منشور اور ایجنڈا لیکر آئیں گے۔ ایسا ایجنڈا جو پاکستان کے لیے پروگریسو پلیٹ فارم ہو گا۔ نئی جمہوری ریفارمز کے لیے جدوجہد کریں گے اور ہر سطح پر انقلابی ریفارمز کرائیں گے۔
new-ppp1
پیپلز پارٹی کے یوم تاسیس کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا میرے نانا شہید کو بھی لاہور نے عزت دی تھی اور 1986 میں میری ماں کا بے نظیر استقبال کیا گیا اسی لیے ہم نے لاہور کو انقلاب کے لیے منتخب کیا ہے۔ انہوں نے کہا محترمہ نے کسی چوک پر دھرنا اور کسی کو گالی نہیں دی تھی اور نہ ہی محترمہ نے کسی ریاستی ادارے پر حملہ کیا تھا۔
مذہب کے بیوپاری سب سے بڑی بیماری ہے۔ مذہب کے بیوپاریوں سے وہ باغی تھی اور میں بھی باغی ہوں۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کہا پیپلز پارٹی چاروں صوبوں کی زنجیر ہے ہر آمر غاصب حکمران نے زنجیر کو توڑنے کی کوشش کی۔ لاہور شہر میں نئی پیپلز پارٹی جنم لے رہی ہے۔ پورے ملک میں ڈسٹرکٹ آرگنائزیشن کا عمل جاری ہے۔ بلاول بھٹو نے کہا ہم ایک نیا منشور اور ایجنڈا لیکر آئیں گے۔ ایسا ایجنڈا جو پاکستان کے لیے پروگریسو پلیٹ فارم ہو گا۔ نئی جمہوری ریفارمز کے لیے جدوجہد کریں گے اور ہر سطح پر انقلابی ریفارمز کرائیں گے۔
بلاول بھٹو زرداری نے ملک کے مقدس اداروں کے دہرے معیاروں کو ہدف تنقید بناتے ہوئےسوال کیا کہ یہ کیسا انصاف ہے کہ شہید بھٹو کے لیے پھانسی اور شہید محترمہ کے قاتلوں کے لیے آزادی ہے؟کیسا انصاف ہے کہ وزیراعظم کے شاہی خاندان کے لیے ایمنسٹی ہے؟
یہ کیسا انصاف ہے کہ یوسف رضا گیلانی کو صرف ایک خط نہ لکھنے پر نا اہل کیا جائے، جبکہ اس کے برعکس پاناما اسکینڈل دنیا کا سب سے بڑا اسکینڈل ہے، کیسا انصاف ہے کہ مقدس گائے کا احتساب حرام قرار دیاجائے ؟انہوں نے نعرہ لگایا کہ بلاول آئے گا،انقلاب لائے گا۔
پیپلز پارٹی آزاد کشمیر،گلگت بلتستان اور چاروں صوبوں کی زنجیر ہے،ہر ظالم حکمران نے اس زنجیر کو توڑنے کی کوشش کی۔
انہوں نے کہا کہ پورے ملک میں ضلعی تنظیم نو سے گزر رہے ہیں،ہم نیا ایجنڈا لائیں گے جو پاکستان کے لیے مکمل عملی ترقی پسند پلیٹ فارم ہوگا،ایجنڈے کے ذریعے نئی جمہوری اصلاحات کےلیے کوشش کریں گے، پاکستان کو آئین پیپلز پارٹی نے دیا ہے،ہم سے زیادہ آئین اور قانون کون جانتاہے۔
بلاول نے کہا کہ ن لیگ حکومت سے 4مطالبات کیےہیں، میرا ساتھ دیا تو پورے ملک میں جمہوری انقلاب لاؤں گا،انصاف کےلیے جمہوری انقلابی اصلاحات لائیں گے،میں سندھ میں تبدیلی لےآیاہوں، پارٹی میں تبدیلی لا رہا ہوں،ن لیگ حکومت نے ہٹ دھرمی کرتے ہوئے مطالبات کا جواب نہیں دیا۔
انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی ذات کے لیے کچھ نہیں مانگا، پارلیمنٹ کو طاقتور کرنے کی بات کر رہاہوں،جمہوری احتساب کی بات کر رہا ہوں، 27دسمبر زیادہ دور نہیں فورس تیار کر رہا ہوں، ہمیں سڑکوں پر آنے پر مجبور نہ کرو، پورالاہور سڑکوں پر ہوگا پھر آپ کو لگ پتا جائے گا، جب پورا پاکستان جل رہا تھا تو بی بی کے بیٹے نے کہا تھا کہ جمہوریت بہترین انتقام ہے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s